Baba Vanga Kon Thi - Biography Of Baba Vanga - Urdu - Hindi - Baba Vanga Predictions

Baba Vanga Kon Thi - Biography Of Baba Vanga - Urdu - Hindi - Baba Vanga Predictions List - In Urdu


mustaqbil mein jhanknay wali baba vanga


baba vanga aik bulgarian nabina khatoon theen. jinhon ny duniya ke halaat se mutaliq kayi paish goyyan ki theen. jin mein se baaz haqeeqat ke qareeb tar theen. un ki world trade center ki paish goi bohat maqbool bhi hui aur is ke ilawa kayi deegar baatein bhi ab taq kaafi durust saabit hochuki hain .
baba vanga Nami khatoon 31 January 1911 ko blgharih ke shehar vangelia mein peda hui. un ki paidaiesh qabal az waqt hui thi. is ilaqay ki rivayet thi ke bachay ka naam kisi ajnabi se rkhwaya jata tha. is bachi ki paidaiesh par kisi ko is ke bachney ki umeed nazar nah aati thi magar jab bachi ki haalat behtar hui to is ki daai ny bahar gali mein ja kar kisi ajnabi raah geer se naam rakhnay ko kaha jis ke baad bil aakhir vangelia naam rakha gaya .
is ke waalid pehli jang azeem ke douran aik sipahi they. baad mein unhon ny doosri shadi kar li .

vanga bachpan se neeli aankhon aur sunehri balon ki wajah se khobsorat to thi hi sath mein zaheen bhi thi aur usay Rohani ilaaj se bhi dilchaspi thi .

vanga ki zindagi mein woh haadsa hwa jis ny usay nabina kar diya. bah qoul is ke kisi hawai bhanwar / toofaan ny usay utha kar itni daur pheink diya ke woh zakhmi haalat mein mili. is ki ankhen matti se bhar gayeen. aur takleef ke maaray is se ankhen nahi kholi ja rahi theen. is ki benaye har terhan ke ilaaj aur koshish ke bawajood khatam hogayi .
1925  mein is ny nabinaon ke school jana shuru kya. aur teen saal taq wahan taleem haasil ki. jahan is ny bril rasam alkht ki likhai sikhi, piano bajana seekha, aur silai karhai aur pakana seekha. souteli maa ki wafaat ke baad woh –apne behan bhaieyon ki dekh bhaal ke liye –apne ghar aa gayi. is ka gharana kaafi ghareeb tha. tamam log mehnat mazdoori karte they. 1939 mein usay pehphron ki aik bemari pleurisy hogayi jis ke baad doctoron ny usay jawab day diya tha ke woh anqareeb mar jaye gi. magar khilaaf tawaqqa woh sahet yab hogayi. jis ki wajah se logon mein is ki Rohani quwatoon ki shohrat honay lagi. 1942 mein is ki shadi hoyi- 11 augst 1996 ko apne aabadi shehar mein fout hui .

vanga khud wajibi si taleem Yafta thi. is ny khud koi kitaab nahi likhi thi. balkay is ki saari baatein is ke paristaron / mulazimo ny tehreer ki theen. vanga daawa karti thi ke is ko kisi na qabil feham zariye se logon ki baatein maloom ho jati hain. vanga ny Soviet Union totnay, charnobel ke haadsay, stalon ki tareekh wafaat, roosi aabdoz karsik  ki tabahi aur saneha gayarah September ki paish goyyan bhi kee. kayi logon ko khayaal hai ke is khatoon ke paas mafooq alfitrat taqtin theen jis ki wajah se yeh mustaqbil ki baatein bataya karti thi .

paish goyyan :
1989
mein is khatoon baba vanga ny kaha tha ke Amrici log intahi khauf mein mubtala hon ge jab un par do aahinii parinday hamla karen ge aur har taraf dehshat ka raaj hoga. kaha jata hai ke yeh pishgoyi 9 / 11 ke baray mein ki gayi thi .

2010
November mein teesri aalmi jung shuru hogi jo october 2014 taq chalay gi, is jung mein atom bomb aur keemiyai hathyaar istemaal kiye jayen ge. yeh paish goi ab taq ghalat saabit hui hai .

2014 - 2016
un saloon mein log jald ki mutadid bimarion mein mubtala hon ge jabkay jald ka sartan taizi se barhay ga. yeh keemiyai hathyaaron ka radd amal ho sakta hai .

2018 - 2023
is waqt ke douran China duniya ki super power ban jaye ga. duniya ke madaar mein halki si tabdeeli bhi hogi .

2025 - 2028
duniya mein bhook par kuch hadd taq qaboo pa liya jaye ga jabkay Europe ke paas tawanai ke zakhair mein izafah hoga .

2033 - 2045
un saloon taq Europe mein musalmanoon ki hukoomat aajay gi. qutbeen par barf pighalnay ki wajah se samndron ka level buland hojaye ga .

2046 - 2070
insani aaza banaye ja saken ge jis ki wajah se un ki tabdeeli aam hojaye gi. America musalmanoon ke shehar par hamla kere ga aur aik naya terhan ka hathyaar istemaal kere ga jis mein darjah hararat taizi se gir sakta hai .

2088 - 2167
aik masnoi Sooraj ki wajah se raat ko khatam kya ja sakay ga. ensaan robot ki terhan ho jaien ge jabkay chhoti qoumain jung karen gi aur barri qoumain daur rahen gi. janwar adhay ensaan ban jayen ge aur aik naye mazhab ki bunyaad rakhi jaye gi .

2170 - 2256
mareekh par mojood abadi nucleai taaqat ban jaye gi aur duniya se azaadi ka mutalba kardey gi .

2262 - 2304
Sooraj thanda par jaye ga aur usay masnoi tor par jalanay ki koshish ki jaye gi lekin yeh koshish ziyada kamyaab nahi ho gi .

2341 - 3805
koi khofnaak cheez khala se zameen ki taraf barh rahi hogi aur dar hoga ke yeh zameen se takra jaye gi lekin yeh khatrah ain waqt par tal jaye ga .

3815 - 3878
log science bhool jayen ge aur janwaron ki terhan rehne lag jayen ge. phir 1 shakhs inhen achi talemaat day kar insaaniyat ki taraf laaye ga .

4302 - 4674
aahista aahista duniya mein insaaniyat wapas aeye gi aur naye shehron ki bunyaad parre gi. shetaniat duniya se khatam hojaye gi aur log kkhuda ki taraf Raghib ho jayen ge .

5079
is saal duniya ka khtama hojaye ga .

** مستقبل میں جھانکنے والی بابا وانگا **

بابا ونگا ایک بلغارین نابینا خاتون تھیں۔ جنہوں نے دنیا کے حالات سے متعلق کئی پیش گوئیاں کی تھیں۔ جن میں سے بعض حقیقت کے قریب تر تھیں۔ ان کی ورلڈ ٹریڈ سینٹر کی پیش گوئی بہت مقبول بھی ہوئی اور اس کے علاوہ کئی دیگر باتیں بھی اب تک کافی درست ثابت ہوچکی ہیں۔
بابا وانگا نامی خاتون31 جنوری 1911ء کو بلغاریہ کے شہر وینجیلا میں پیدا ہوئی۔ ان کی پیدائش قبل از وقت ہوئی تھی۔ اس علاقے کی روایت تھی کہ بچے کا نام کسی اجنبی سے رکھوایا جاتا تھا۔ اس بچی کی پیدائش پر کسی کو اس کے بچنے کی امید نظر نہ آتی تھی مگر جب بچی کی حالت بہتر ہوئی تو اس کی دائی نے باہر گلی میں جا کر کسی اجنبی راہ گیر سے نام رکھنے کو کہا جس کے بعد باالآخر وینجیلا نام رکھا گیا۔
اس کے والد پہلی جنگ عظیم کے دوران ایک سپاہی تھے۔ بعد میں انھوں نے دوسری شادی کر لی۔

ونگا بچپن سے نیلی آنکھوں اور سنہری بالوں کی وجہ سے خوبصورت تو تھی ہی ساتھ میں ذہین بھی تھی اور اسے روحانی علاج سے بھی دلچسپی تھی۔

ونگا کی زندگی میں وہ حادثہ ہوا جس نے اسے نابینا کر دیا۔ بہ قول اس کے کسی ہوائی بھنور/ طوفان نے اسے اٹھا کر اتنی دور پھینک دیا کہ وہ زخمی حالت میں ملی۔ اس کی آنکھیں مٹی سے بھر گئیں۔ اور تکلیف کے مارے اس سے آنکھیں نہیں کھولی جا رہی تھیں۔ اس کی بینائی ہر طرح کے علاج اور کوشش کے باوجود ختم ہوگئی۔
1925ء میں اس نے نابیناؤں کے اسکول جانا شروع کیا۔ اور تین سال تک وہاں تعلیم حاصل کی۔ جہاں اس نے بریل رسم الخط کی لکھائی سیکھی ، پیانو بجانا سیکھا ، اور سلائی کڑھائی اور پکانا سیکھا۔ سوتیلی ماں کی وفات کے بعد وہ اپنے بہن بھائیوں کی دیکھ بھال کے لئے اپنے گھر آ گئی۔ اس کا گھرانہ کافی غریب تھا۔ تمام لوگ محنت مزدوری کرتے تھے۔ 1939ء میں اسے پھیپھڑوں کی ایک بیماری Pleurisy ہوگئي جس کے بعد ڈاکٹروں نے اسے جواب دے دیا تھا کہ وہ عنقریب مر جائے گی۔ مگر خلاف توقع وہ صحت یاب ہوگئی۔ جس کی وجہ سے لوگوں میں اس کی روحانی قوتوں کی شہرت ہونے لگی۔ 1942ء میں اس کی شادی ہوئی- 11 اگست 1996ء کو اپنے آبائی شہر میں فوت ہوئی۔
ونگا خود واجبی سی تعلیم یافتہ تھی۔ اس نے خود کوئی کتاب نہیں لکھی تھی۔ بلکہ اس کی ساری باتیں اس کے پرستاروں / ملازموں نے تحریر کی تھیں۔ ونگا دعوی کرتی تھی کہ اس کو کسی ناقابل فہم ذریعے سے لوگوں کی باتیں معلوم ہو جاتی ہیں۔ ونگا نے سوویت یونین ٹوٹنے ، چرنوبل کے حادثے ، اسٹالن کی تاریخ وفات ، روسی آبدوز کرسک کی تباہی اور سانحہ گیارہ ستمبر کی پیش گوئیاں بھی کیں۔ کئی لوگوں کو خیال ہے کہ اس خاتون کے پاس مافوق الفطرت طاقتیں تھیں جس کی وجہ سے یہ مستقبل کی باتیں بتایا کرتی تھی۔
پیش گوئیاں :
1989ء
میں اس خاتون بابا وانگا نے کہا تھا کہ امریکی لوگ انتہائی خوف میں مبتلا ہوں گے جب ان پر دو آہنی پرندے حملہ کریں گے اور ہر طرف دہشت کا راج ہوگا۔کہا جاتا ہے کہ یہ پیشگوئی 9/11 کے بارے میں کی گئی تھی۔

2010ء
نومبر میں تیسری عالمی جنگ شروع ہوگی جو اکتوبر 2014ء تک چلے گی،اس جنگ میں ایٹم بم اور کیمیائی ہتھیار استعمال کئے جائیں گے۔یہ پیش گوئی اب تک غلط ثابت ہوئی ہے۔

2014-2016
ان سالوں میں لوگ جلد کی متعدد بیماریوں میں مبتلا ہوں گے جبکہ جلد کا سرطان تیزی سے بڑھے گا۔یہ کیمیائی ہتھیاروں کا رد عمل ہوسکتا ہے۔

2018-2023
اس وقت کے دوران چین دنیا کی سپر پاور بن جائے گا۔دنیا کے مدار میں ہلکی سی تبدیلی بھی ہوگی۔

2025 - 2028
دنیا میں بھوک پر کچھ حد تک قابو پا لیا جائے گا جبکہ یورپ کے پاس توانائی کے ذخائر میں اضافہ ہوگا۔

2033 - 2045
ان سالوں تک یورپ میں مسلمانوں کی حکومت آجائے گی۔قطبین پر برف پگھلنے کی وجہ سے سمندروں کا لیول بلند ہوجائے گا۔

2046 - 2070
انسانی اعضاء بنائے جا سکیں گے جس کی وجہ سے ان کی تبدیلی عام ہوجائے گی۔امریکہ مسلمانوں کے شہر پر حملہ کرے گا اور ایک نیا طرح کا ہتھیار استعمال کرے گا جس میں درجہ حرارت تیزی سے گر سکتا ہے۔

2088 - 2167
ایک مصنوعی سورج کی وجہ سے رات کو ختم کیا جا سکے گا۔انسان روبوٹ کی طرح ہوجائیں گے جبکہ چھوٹی قومیں جنگ کریں گی اور بڑی قومیں دور رہیں گی۔جانور آدھے انسان بن جائیں گے اور ایک نئے مذہب کی بنیاد رکھی جائے گی۔

2170 - 2256
مریخ پر موجود آبادی نیوکلیائی طاقت بن جائے گی اور دنیا سے آزادی کا مطالبہ کردے گی۔

2262 - 2304
سورج ٹھنڈا پڑ جائے گا اور اسے مصنوعی طور پر جلانے کی کوشش کی جائے گی لیکن یہ کوشش زیادہ کامیاب نہیں ہو گی۔

2341 - 3805
کوئی خوفناک چیز خلاء سے زمین کی طرف بڑھ رہی ہوگی اور ڈر ہوگا کہ یہ زمین سے ٹکرا جائے گی لیکن یہ خطرہ عین وقت پر ٹل جائے گا۔

3815 - 3878
لوگ سائنس بھول جائیں گے اور جانوروں کی طرح رہنے لگ جائیں گے۔پھر ایک شخص انہیں اچھی تعلیمات دے کر انسانیت کی طرف لائے گا۔

4302 - 4674
آہستہ آہستہ دنیا میں انسانیت واپس آئے گی اور نئے شہروں کی بنیاد پڑے گی۔شیطانیت دنیا سے ختم ہوجائے گی اور لوگ خدا کی طرف راغب ہو جائیں گے۔

5079
اس سال دنیا کا خاتمہ ہوجائے گا۔