Sabaq Amoz Kahaniyan

[Sabaq Amoz Kahaniyan][twocolumns]

Jokes And Funny

[Jokes & Funny Posts][bleft]

Dilchasp O Ajeeb

[Dilchasp O Ajeeb Haqaiq][twocolumns]

Poetry

[Poetry][bsummary]

سبق آموز کہانی Urdu Moral Story - ایک کان والا شہزادہ

 سبق آموز کہانی Urdu Moral Story - ایک کان والا شہزادہ

badshah-aur-shehzada-sabaq-amoz
ایک بادشاہ کی شادی کو عرصہ ہوگیا مگر گھر میں ولی عہد کی کمی ہی رہی تو اس نے سلطنت کے کونے کونے سے اپنے اور اپنی ملکہ کے علاج معالجے کیلئے حکیم بلوائے۔ مقدر میں لکھا تھا اور اللہ نے ملکہ کی گود ہری کر دی۔بیٹا پیدا ہوا تو بادشاہ کو یہ دیکھ کر چپ ہی لگ گئی کہ اس کے بیٹے میں ایک پیدائشی معذوری تھی اور وہ ایک کان کے ساتھ پیدا ہوا تھا۔ بادشاہ نے اپنے سارے وزیر بلوا بھیجے اور ان سے مشورہ کیا کہ اتنی بڑی سلطنت کی باگ دوڑ سنبھالنے کیلئے پیدا ہونے والا یہ ولی عہد جب اپنے آپ کو یوں معذور پائے گا تواحساس محرومی کا شکار ہو جائیگا۔ کس طرح اس کی اس خامی پر قابو پایا جائے؟وزیروں نے مشورہ دیا بادشاہ سلامت، یہ تو کوئی بات ہی نہیں، اعلان کرا دیجیئے کہ آج سے جو بھی بچہ پیدا ہو اس کا ایک کان کاٹ لیا جائے۔ شہزادے کے سارے ہمجولی اور اس کے سامنے پلنے والی ساری نسل جب ایک کان والی ہوگی تو شہزادے کے دل میں کسی قسم کی محرومی کا احساس ہی نہیں پیدا ہوگا۔ حکم نافذ کر کے عملدرآمد شروع کرا دیا گیا، اگلے دسیوں سالوں میں مملکت میں ایک کان والی نسل دیکھنے کو ملی اور لوگ اس عادت اور تقلید میں رچ بس گئے۔ایک بار کہیں سے گھومتا پھرتا بھولا بھٹکا ایک نوجوان اس مملکت میں آن ٹپکا۔ لوگ دو کانوں والے
لڑکے کو دیکھ کر بہت حیران ہوئے، بچے اس عجیب الخلقت نوجوان کے پیچھے پڑ گئے اور دو کانوں دو کانوں والا کہہ کر چھیڑتے۔ اس نوجوان کو بھی اپنا آپ ایک عجوبہ لگنا شروع ہو گیا، تاکہ وہ ان لوگوں میں تماشہ بن کر نا رہے اس نے اپنا ایک کان ہی کٹوا لیا۔کیا ایسا ممکن ہے کہ پوری کی پوری خلقت ہی ایسی عقلی معذور بن جائے؟
جی، انسانی تاریخ میں ایسا ہزاروں بار ہو چکا ہے۔ لوگوں کی اسی کج فہمی اور ٹیڑھی عقلی معذوری کی اصلاح کیلیئے ہی تو اللہ سبحانہ و تعالیٰ بار بار اپنے نبی بھیجتے تھے جیسے:۔سیدنا ابراہیم علیہ السلام کی پوری قوم شرک کی معذوری کا شکار تھی، ایک اکیلا ابراہیم (علیہ السلام) ان میں اور ان کو بہت ہی عجیب دکھائی دیتا تھا۔

سیدنا لوط علیہ السلام کی پوری کی پوری قوم فطرت کی مخالف سمت میں چلنے والی تھی، ایک اکیلا لوط (علیہ السلام) ان میں عجیب دکھائی دیتا تھا کیونکہ وہ ان جیسا کام نہیں کرتا تھا۔سیدنا شعیب علیہ السلام کی پوری کی پوری قوم سود اور چور بازاری میں ایسی مبتلاء تھی کہ ان میں اکیلا شعیب (علیہ السلام) بہت ہی انوکھا نظر آتا تھا۔دیکھیئے: فقہ میں ایک بنیادی اصول یہ ہوتا ہے کہ: سب لوگوں کا کسی ایک بات پر متفق ہوجانا اسے حلال نہیں بنا دیا کرتا۔
غلط ہمیشہ غلط رہے گا بھلے ساری مخلوق اسے کرنا شروع کردے اور صحیح ہمیشہ صحیح رہے گا بھلے مخلوق میں سے کوئی ایک بھی اسے کرنے پر آمادہ نا ہو۔بات کان کٹوا لینے کی نہیں ہے۔ اگر آپ کو یقین ہے کہ آپ ٹھیک ہیں تو پھر ان کو راضی کرنے کے لیئے اپنے سچ سے نا پھرو۔ اگر وہ اپنے غلط پر شرمندہ نہیں ہیں تو آپ کاہے کو اپنے ٹھیک ہونے پر شرماتے ہیں ؟

Aik badshah ki shadi ko arsa hogaya magar ghar mein walii ehad ki kami hi rahi. muqaddar mein likha tha aur Allah nay malka ki goad hari kar di. beta peda sun-hwa to badshah ko yeh dekh kar chup hi lag gayi ke usay pedaishi mazoori thi aur woh aik kaan ke sath peda sun-hwa tha. badshah nay –apne saaray wazeer bulawa beje aur un se mahswara kya ke
itni barri saltanat ki baag daud snbhalne ke liye peda honay wala yeh walii ehad jab –apne aap ko yun mazoor paye ga to ehsas mehroomi ka shikaar ho jaayegaa. kis terhan is ki is khaami par qaboo paaya jaye? vziron nay mahswara diya badshah salamat, yeh to koi baat hi nahi, elaan kara dijiye ke aaj se jo bhi bacha peda ho is ka aik kaan kaat liya jaye. sahebzaade ke saaray hamjoli aur is ke samnay palne wali saari nasal jab aik kaan wali hogi to sahebzaade ke dil mein kisi qisam ki mehroomi ka ehsas hi nahi peda hoga. hukum nafiz kar ke amal-dar-aamad shuru kara diya gaya, aglay dsyon saloon mein mumlikat mein aik kaan wali nasal dekhnay ko mili aur log is aadat aur taqleed mein rach bas gay. aik baar kahin se ghoomta phirta bhola bhatka aik nojawan is mumlikat mein aan tapka. log do kaanon walay larke ko dekh kar bohat heran hue, bachay is ajeeb al-khalqat nojawan ke peechay par gay aur do kaanon do kaanon wala keh kar chairtay. is nojawan ko bhi apna aap aik ajooba lagna shuru ho gaya, taakay woh un logon mein tamasha ban kar na rahay uss nay apna aik kaan hi katwa liya. kya aisa mumkin hai ke poori ki poori khalqat hi aisi aqli mazoor ban jaye? jee, insani tareekh mein aisa hazaron baar ho chuka hai. logon ki isi kaj fehmi aur tedhi aqli mazoori ki islaah kaileeay hi to Allah Subhana o taala baar baar –apne nabi bhaijtay they jaisay : syedna ibrahim aleh salam ki qoum shirk ki mazoori ka shikaar thi, aik akailey ibrahim ) aleh salam ( un mein aur un ko bohat hi ajeeb dikhayi deta tha. syedna Loot aleh salam ki poori ki horry qoum fitrat ki mukhalif simt mein chalne wali thi, aik akailey Loot ) aleh salam ( un mein ajeeb dikhayi dete they kyunkay woh un jaissa kaam nahi karte they. syedna Shoiab aleh salam ki poori ki poori qoum sood aur chor bazari mein aisi mobtila thi ke un mein akailey Shoiab ) aleh salam ( bohat hi anokhay nazar atay they. dikhiye : fiqa mein aik bunyadi usool yeh hota hai ke : logon ka kisi aik baat par mutfiq hojana usay halal nahi bana diya karta. ghalat hamesha ghalat rahay ga bhallay saari makhlooq usay karna shuru kardey aur sahih hamesha sahih rahay ga bhallay makhlooq mein se koi aik bhi usay karne par amaada na ho. baat kaan katwa lainay ki nahi hai. agar tujhe yaqeen hai ke to theek hai to phir un ko raazi karne kaileeay –apne sach se na phir. agar woh –apne ghalat par sharminda nahi hain to to kaahe ko –apne theek honay par sharmaata hai? aik aakhri baat kaan khol kar sun le, woh jo kehte hain naan ke saaray ke saaray log aisay kehte hain jub bhi Quran mein saaray ke saaray logon ka kabhi zikar aaya hai naan, to un "sifton” ko batatay hue aaya hai ke : woh to aqal hi nahi rakhtay. woh to ilm hi nahi rakhtay. woh to shukar hi nahi ada karte
                     
                     mazeed kahaniyan parhne ke liye yahan click karein